: نجی ٹی وی چینل پروگرام میں بات کرتے ہوئے رﺅوف کلاسرا نے کہا کہ وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کو اچھی طرح پتہ ہے کہ ان کی پارٹی کےلوگ تحریک انصاف سے رابطوں میں ہیں۔ انہوں نے چیف جسٹس سے ملاقات کر کے ان لوگوں کو یہ تاثر دیاہے کہ نہیں نہیں حالات کنٹرول میں ہیں۔ اس ملاقات کا سب سے زیادہ نقصان حکومتی پارٹی کو ہو گا۔ چیف جسٹس صاحب تو اتنے سیدھے ہیں کہ وہ اکثر وہ باتیں بھی کر جاتے ہیں جو ان کو نہیں کرنی چاہئیں، اس ملاقات میں کیا کچھ ہو اہے، چیف جسٹس صاحب سے اگر پوچھا گیا تو وہ بتا دیں گے۔ انہوں نے کہا کہ مجھے اُمید ہے کہ ملاقات میں کوئی نہ کوئی نوٹ ٹیکر ہو گا ،اور منٹس بنے ہوں گے ۔ یہ کہہ رہے ہیں کہ ون آن ون ملاقات تھی لیکن میرے خیال سے چیف جسٹس نے یقیناً کسی کو بٹھایا ہو گا، کیونکہ شاہد خاقان عباسی کا کیا اعتبار ہے ،کہ وہ نواز شریف کو خوش کرنے کے لیے کچھ بھی کہہ دیں

وزیر اعظم اورچیف جسٹس کی ملاقات ون آن ون نہیں بلکہ وہاں کوئی اور بھی موجود تھا

: نجی ٹی وی چینل پروگرام میں بات کرتے ہوئے رﺅوف کلاسرا نے کہا کہ وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کو اچھی طرح پتہ ہے کہ ان کی پارٹی کےلوگ تحریک انصاف سے رابطوں میں ہیں۔ انہوں نے چیف جسٹس سے ملاقات کر کے ان لوگوں کو یہ تاثر دیاہے کہ نہیں نہیں حالات کنٹرول میں ہیں۔ اس ملاقات کا سب سے زیادہ نقصان حکومتی پارٹی کو ہو گا۔ چیف جسٹس صاحب تو اتنے سیدھے ہیں کہ وہ اکثر وہ باتیں بھی کر جاتے ہیں جو ان کو نہیں کرنی چاہئیں، اس ملاقات میں کیا کچھ ہو اہے، چیف جسٹس صاحب سے اگر پوچھا گیا تو وہ بتا دیں گے۔ انہوں نے کہا کہ مجھے اُمید ہے کہ ملاقات میں کوئی نہ کوئی نوٹ ٹیکر ہو گا ،اور منٹس بنے ہوں گے ۔ یہ کہہ رہے ہیں کہ ون آن ون ملاقات تھی لیکن میرے خیال سے چیف جسٹس نے یقیناً کسی کو بٹھایا ہو گا، کیونکہ شاہد خاقان عباسی کا کیا اعتبار ہے ،کہ وہ نواز شریف کو خوش کرنے کے لیے کچھ بھی کہہ دیں
: نجی ٹی وی چینل پروگرام میں بات کرتے ہوئے رﺅوف کلاسرا نے کہا کہ وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کو اچھی طرح پتہ ہے کہ ان کی پارٹی کےلوگ تحریک انصاف سے رابطوں میں ہیں۔ انہوں نے چیف جسٹس سے ملاقات کر کے ان لوگوں کو یہ تاثر دیاہے کہ نہیں نہیں حالات کنٹرول میں ہیں۔ اس ملاقات کا سب سے زیادہ نقصان حکومتی پارٹی کو ہو گا۔
چیف جسٹس صاحب تو اتنے سیدھے ہیں کہ وہ اکثر وہ باتیں بھی کر جاتے ہیں جو ان کو نہیں کرنی چاہئیں، اس ملاقات میں کیا کچھ ہو اہے، چیف جسٹس صاحب سے اگر پوچھا گیا تو وہ بتا دیں گے۔ انہوں نے کہا کہ مجھے اُمید ہے کہ ملاقات میں کوئی نہ کوئی نوٹ ٹیکر ہو گا ،اور منٹس بنے ہوں گے ۔ یہ کہہ رہے ہیں کہ ون آن ون ملاقات تھی لیکن میرے خیال سے چیف جسٹس نے یقیناً کسی کو بٹھایا ہو گا، کیونکہ شاہد خاقان عباسی کا کیا اعتبار ہے ،کہ وہ نواز شریف کو خوش کرنے کے لیے کچھ بھی کہہ دیں
: نجی ٹی وی چینل پروگرام میں بات کرتے ہوئے رﺅوف کلاسرا نے کہا کہ وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کو اچھی طرح پتہ ہے کہ ان کی پارٹی کےلوگ تحریک انصاف سے رابطوں میں ہیں۔ انہوں نے چیف جسٹس سے ملاقات کر کے ان لوگوں کو یہ تاثر دیاہے کہ نہیں نہیں حالات کنٹرول میں ہیں۔ اس ملاقات کا سب سے زیادہ نقصان حکومتی پارٹی کو ہو گا۔
چیف جسٹس صاحب تو اتنے سیدھے ہیں کہ وہ اکثر وہ باتیں بھی کر جاتے ہیں جو ان کو نہیں کرنی چاہئیں، اس ملاقات میں کیا کچھ ہو اہے، چیف جسٹس صاحب سے اگر پوچھا گیا تو وہ بتا دیں گے۔ انہوں نے کہا کہ مجھے اُمید ہے کہ ملاقات میں کوئی نہ کوئی نوٹ ٹیکر ہو گا ،اور منٹس بنے ہوں گے ۔ یہ کہہ رہے ہیں کہ ون آن ون ملاقات تھی لیکن میرے خیال سے چیف جسٹس نے یقیناً کسی کو بٹھایا ہو گا، کیونکہ شاہد خاقان عباسی کا کیا اعتبار ہے ،کہ وہ نواز شریف کو خوش کرنے کے لیے کچھ بھی کہہ دیں

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں