ملک میں تجارت اور سیاحت کا فروغ پاکستان نے امریکہ، روس اور برطانیہ سمیت 68 ممالک کو پاکستان پہنچنے پر ویز ا دینے کی سہولت کا آغاز کردیا گیا

ملک میں تجارت اور سیاحت کا فروغ پاکستان نے امریکہ، روس اور برطانیہ سمیت 68 ممالک کو پاکستان پہنچنے پر ویز ا دینے کی سہولت کا آغاز کردیا گیا

ملک میں تجارت اور سیاحت کو فروغ دینے کیلئے پاکستان نے امریکہ، روس اور برطانیہ سمیت 68 ممالک کو پاکستان پہنچنے پر ویز ا دینے کی سہولت کا آغاز کر دیا گیا۔ بزنس ویزا آن اراول ( BVOA) کی سہولت حاصل کرنے کیلئے مقامی تاجر اور چیمبر آف کامرس کی جانب سے جاری کردہ دعوت نامہ ہونا ضروری ہے،ابتدائی مراحل میں یہ ویز ا تیس دن تک کار آمد ہوگا۔
سابق وزیر داخلہ چوہدری نثار علی خان کی پالیسی کے برعکس موجودہ وزیر داخلہ احسن اقبال نے بین الاقوامی تاجروں اور سیاحوں کو پاکستان میں سرمایہ کاری اور سیاحت کی غرض سے آن اراول ویز ا کی سہولت پھر سے بحال کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ ذرائع نے آن لائن کو بتایا کہ حکومت نے فیصلہ کیا ہے کہ بوسنیا ہرزوگوینا، آزبائیجان، چلی، سائپرس، چیک ریپبلک ، مصر، اسٹونیا، مالٹا، سیلواکیا، ترکی، ترکمانستان، اور ویت نام سمیت 68ممالک کو پاکستانی ائرپورٹ پہنچنے پر بزنس ویز اجاری کیا جائے گا، یہ سہولت حاصل کرنے کیلئے اصلی دعوت نامہ اور چیمبر آف کامرس کا خط ہونا ضروری ہے، اس کے علاوہ 24دوست ممالک کو سیاحت کیلئے بھی پاکستان پہنچنے پر ویز ا دینے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔
نئی پالیسی کے تحت چین، فن لینڈ ، آسٹریا، بیلجیم ، ڈنمارک، فرانس ، یونان، برطانیہ اور امریکہ سمیت دیگر دوست ممالک اس سہولت سے فائدہ حاصل کرسکیں گے، پاکستان ٹورزم ڈولپمنٹ کارپوریشن کے فراہم کردہ اعدادوشمار کے مطابق گزشتہ سالوں میں سیاحوں کی تعداد میں تین گنا اضافہ ہوا ہے۔ سال 2013ء کے بعد سال 2016ء میں پاکستان میں سیاحوں کی تعداد 17لاکھ اور پچاس سے زیادہ ہوگئی ہے۔واضع رہے کہ سابق وزیر داخلہ چوہدر ی نثار علی نے بزنس ویز ا آن ارول پر پابند ی عائد کردی تھی۔ جبکہ موجودہ وزیر داخلہ احسن اقبال کا موقف ہے کہ ملک میں تجارت اور سیاحت کوفروغ دینے کیلئے یہ حکمت عملی اختیار کی ہے ۔۔۔۔۔۔۔۔۔ شمیم محمود۔۔۔ نامہ نگار

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں