دبئی کے ہوٹل میں تین بہنیں انتہائی شرمناک کام کرتے رنگے ہاتھوں پکڑی گئیں

دبئی کے ہوٹل میں تین بہنیں انتہائی شرمناک کام کرتے رنگے ہاتھوں پکڑی گئیں

مختصر مدت کے لئے بیرون ملک جانے والوں کے لئے وزٹ ویزے کو ایک بڑی سہولت سمجھا جاتا ہے لیکن افسوس کہ اس ویزے کا شیطانی کاموں کے لئے بھی بڑے پیمانے پر استعمال ہونے لگا ہے۔ غیرقانونی قیام کاراستہ ہموار کرنے سے لے کر منشیات اور جسم فروشی کے دھندے جیسے کام اس ویزے کی آڑ میں ہونے لگے ہیں۔ وزٹ ویزے پر دبئی آنے والی تین عرب بہنیں بھی ایک ایسی ہی مثال ہیں جو ہوٹل کے کمرے میں اپنے ہم وطن نوجوان کے ساتھ منشیات استعمال کرتی ہوئی رنگے ہاتھوں پکڑی گئی ہیں۔
خلیج ٹائمز کے مطابق ایک عرب نوجوان نے ہوٹل کا کمرہ بک کروایا تھا، جس کے لئے ایک 26 سالہ لڑکی نے مدد فراہم کی تھی او راس بکنگ کا مقصد ہی مل کر منشیات استعمال کرنا تھا۔ اخبار ’البیان‘ کی رپورٹ کے مطابق کمرہ بک کروانے والے نوجوان نے ہی تینوں بہنوں کے لئے منشیات کا اہتمام کیا تھا۔ مزید افسوس کی بات یہ ہے کہ تین بہنوں میں سے ایک کمسن ہے، لیکن اس کے باوجود اسے بھی نشہ بازی کی محفل کا حصہ بنایا گیا۔
منشیات کا انتظام کرنے والے نوجوان کے خلاف منشیات رکھنے اور منشیات دیگر افراد کو فراہم کرنے کے الزامات کے تحت مقدمہ درج کیا گیا ہے جبکہ تینوں بہنوں کے خلاف منشیات استعمال کرنے کے الزام کے تحت قانونی کارروائی کی جارہی ہے۔ پبلک پراسیکیوشن نے ابتدائی قانونی کارروائی کے بعد یہ کیس عدالت کے پاس بھیج دیا ہے۔
بشکریہ روزنامہ پاکستان

loading…


اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں